Ghazal Sham Ke Baad: Farhat Abbas Shah


تو نے دیکھا ہے کبھی اک نظر شام کے بعد
کتنے چُپ چاپ سے لگتے ہیں شجر شام کے بعد

اتنے چُپ چاپ کہ راستے بھی رہیں گے لاعلم
چھوڑ جائیں گے کسی روز نگر شام کے بعد

… میں نے ایسے ہی گناہ تیری جدائی میں کئے
جیسے طوفان میں کوئی چھوڑ دے گھر شام کے بعد

شام سے پہلے وہ مست اپنی دعاؤں میں رہا
جس کے ہاتھوں میں تھے ٹوٹے ہوئے پَر شام کے بعد

رات بیتی تو گنے آبلے اور پھر سوچا
کون تھا باعثِ آغازِ سفر شام کے بعد

تُو ہے سورج تجھے معلوم کہاں رات کا دُکھ
تُو کسی روز میرے گھر میں اُتر شام کے بعد

لوٹ آئے نہ کسی روز وہ آوارہ مجاز
کھول رکھے ہیں اسی آس پہ دَر شام کے بعد

فرحت عباس شاہ

 

 

 

Advertisements

About NimdA

nothing

Posted on July 27, 2012, in اردو شاعری. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: