Iqtibas Raaz Ki Baat: AShfaq Ahmad


 

اس میں کیا راز ہے?

مجھے یاد ہے وہاں ایک اشرف لغاری آیا کرتا تھا – اسے پتنگ اڑازے کا بڑا شوق تھا اور بڑا ہی پتنگ باز سجنا تھا وہ خوبصورت سی ریشمی چادر باندھتا تھا اور کندھے پر پرنا رکھتا تھااور جوں جوں بسنت قریب آتی جاتی تھی اس کا شوق اور مانگ بڑھتی جاتی تھی۔
میں نے اس سے کہا “اشرف تم پتنگ سے اتنی محبت کیوں کرتے ہو”
وہ کہنے لگا ” صآحب آپ اگر کبھی پتنگ اڑا کر دیکھیں اور اپ کو بھی اس کی ڈور کا جھٹکا پڑے تو آپ کبھی اسے

چھوڑ نہ سکیں ”
میں نے کہا ” تم ڈیرے پر آتے ہو- بابا جی کی باتیں سنتے ہو اور ان کی خدمیتیں بھی کرتے ہو ”

وہ بولا ” صاحب یہ سب کچھ میری گڈی (پتنگ) اڑانے کی وجہ سے ہوتا ہے ”
میں نے کہا یار اس میں کیا راز ہے ، تو وہ کہنے لگا جب میرا پتنگ بہت اونچا چلا جاتا ہے اور “ٹکی” ہو جاتا ہے اور نظروں سے اوجھل ہو جاتا ہے اور میرے ہاتھ میں صرف اسکی ڈور ہوتی ہے تو اس نہ نظر آنے کی جو کھینچ ہوتی ہے ، اس نے مجھے اللہ کے قریب کر دیا ہے اور میرے دل پر اللہ کی کھینچ بھی ویسے ہی پڑتی ہے جیسے اس پتنگ کی میرے ہاتھوں پر پڑتی ہے ”

از اشفاق احمد ، زاویہ 3 صفحہ نمبر 76

 

Advertisements

About NimdA

nothing

Posted on September 4, 2012, in اقتباس کولیکشن, اردو نثر. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: