Bahar Rut Mein Ujar Rastay Taka Karo Ge to Ro Paro Ge: Mohsin Naqvi


بہار رُت میں اجاڑ راستے ،
تکا کرو گے تو رو پڑو گے …

کسی سے ملنے کو جب بھی محسن ،
سجا کرو گے تو رو پڑو گے … .

تمھارے وعدوں نے یار مجھ کو ،
تباہ کیا ہے کچھ اس طرح سے …

کے زندگی میں جو پھر کسی سے ،
دغا کرو گے تو رو پڑو گے …

میں جانتا ہوں میری محبت ،
اجاڑ دے گی تمہیں بھی ایسی …

کے چاند راتوں میں اب کسی سے ،
ملا کرو گے تو رو پڑو گے …

برستی بارش میں یاد رکھنا ،
تمہیں ستائیں گی میری آنکھیں …

کسی ولی کے مزار پر جب
دعا کرو گے تو رو پڑو گے

Advertisements

About NimdA

nothing

Posted on October 15, 2012, in اردو شاعری. Bookmark the permalink. 1 Comment.

  1. Verrrrrrrrry nice…..

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: