بستیاں کب ویران ہوتی ہیں


Yasir Imran Mirza


کہتے ہیں کہ ایک طوطا طوطی کا گزر ایک ویرانے سے ہوا ، ویرانی دیکھ کر طوطی نے طوطے سے پوچھا  ”کس  قدر  ویران گاؤں ہے؟ “ طوطے نے کہا ”لگتا ہے یہاں کسی الو کا گزر ہوا ھے “جس وقت طوطا طوطی باتیں کر رہے تھے ، عین اس وقت ایک اُلو بھی وہاں سے گزر رہا تھا ،اس نے طوطے کی بات سنی اور وہاں رک کر ان سے مخاطب ہوکر بولا، تم لوگ اس گاؤں میں مسافر لگتے ہو، آج رات تم لوگ میرے مہمان بن جاؤ،میرے ساتھ کھانا کھاؤ۔

اُلو کی محبت بھری دعوت سے طوطا طوطی انکار نہ کرسکے اور انہوں نے اُلو کی دعوت قبول کرلی، کھانا کھا کر جب انہوں نے رخصت ہونے کی اجازت چاہی، تو اُلو نے طوطی کا ہاتھ پکڑ لیا ور کہا ۔۔۔ تم کہاں جا رہی ہو ،طوطی پریشان ہو کر بولی یہ کوئی پوچھنے کی بات ہے ،میں اپنے خاوند کے…

View original post 221 more words

Advertisements

About NimdA

nothing

Posted on November 7, 2012, in اقتباس کولیکشن. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: