Reza Reza Sapno Walay


ریزہ ریزہ سپنوں والے
ٹوٹے چہرے
آدھے لوگ
جانے والے کب آتے ہیں
کیوں کرتے ہیں وعدے لوگ

آس میں بیٹھی شہزادی کی
مانگ میں چاندی جھانک چکی
اتنی دیر سے کیوں آتے ہیں
آخر یہ شہزادے لوگ

پیار کی راہ پہ انگلی تھامے
اندھا دھند چل پڑتی ہیں
نا سمجھی میں مر جاتے ہیں
ہم سے سیدھے سادے لوگ

ہم دونوں میں کون ہے مجرم
یہ طے ہونا مشکل ہے
آدھا شہر تھا حامی اسکا
ساتھ تھے میرے آدھے لوگ .

Also Read:

Best 2 Line Urdu Poetry

Advertisements

About NimdA

nothing

Posted on September 23, 2014, in اردو شاعری. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: