Shareer Chiryo – شریر چڑیو


شریر چڑیو!
سنو مجھے اک گلہ ہے تم سے
کہ منہ اندھیرے
تمہاری بک بک، تمہاری جھک جھک
تمہاری چوں چاں
سماعتوں پر تمہاری دستک
ہے غل مچاتی، مجھے جگاتی، بڑا ستاتی
شریر چڑیو!

یہ تم نہ جانو
میں رات مشکل سے سو سکی تھی
اداسیوں کے سمندروں میں
میں اپنی آنکھیں ڈبو چکی تھی
بہت سے تکیے بھگو چکی تھی
چلے گئے سب ہی جاننے والے
ڈسیں جدائی کے ناگ کالے
پڑے ہیں کیوں مجھ کو جاں کے لالے
یہ تم نہ جانو، یہ تم نہ جانو
شریر چڑیو!

ہے چہچہانا اگر ضروری
نئی سحر کی نوید لاؤ
کوئی نویلا سا گیت گاؤ
مجھے جگانا ہے گر ضروری
تو سن لو پہلے شریر چڑیو!
مرے مقدر جو ایک مدت سے سو رہے ہیں
انہیں جگاؤ، شریر چڑیو انہیں جگاؤ

Chidriya Ghazal

Advertisements

About NimdA

nothing

Posted on October 1, 2014, in اردو شاعری. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: