Bachpan Ke Saathi – Nasir Kaazmi


“بچپن میں اپنے دو قسم کے ساتھی تھے- ایک وہ لڑکے تھے جو اتراتے ہوے آتے اور بتایا کرتے تھے کہ ہمارے گھر گرامو فون آیا ہے ، ہمارے بھائی نے سائیکل خریدی ہے، ہمارے تایا جان ڈپٹی ہو گئے ہیں- دوسرے وہ لڑکے تھے جو آنکھوں میں حیرت لئے دوڑے دوڑے آتے اور بتاتے کہ ہماری کنگنی پر چڑیا نے گھونسلہ بنایا ہے ، یا یہ کہ سکول کے پچھواڑے والے درخت پر جو فاختہ نے گھونسلہ بنایا تھا اب اس نے انڈے دئیے ہیں، یا یہ کہ فلاں نیم کی کھکھل میں طوطے کے بچے نکلے ہیں-
مگر اب شہر پھیلتے جا رہے ہیں اور ٹرانسسٹر دیہات تک میں پہنچ گیا ہے- لڑکوں کو یہ اطلاع تو ہوتی ہے کہ فلاں پکچر ہاؤس میں فلاں فلم لگی ہے مگر انہیں گھر کے اونچے طاقچوں میں رکھے گھونسلوں اور کیاری میں کھلے ہوے پھولوں کی خبر نہیں ہوتی…… یا شائد اب ہمارے گھر اتنے صاف ستھرے رہنے لگے ہیں…. کہ چڑیاں ان میں گھونسلے بنا ہی نہیں سکتیں…….!!”
(ناصر کاظمی – “خشک چشمے کے کنارے” سے اقتباس)

Download Collection of Urdu Quotes & Poetry

Advertisements

About NimdA

nothing

Posted on April 12, 2015, in اقتباس کولیکشن. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: